Your Favorite Daily Geeks

مجھے تم سے محبت کے سوا کچھ نہیں آتا

617

سنو پیارے

مجھے معلوم ہے آسان لگتا ہے

تمہیں راہیں بدل لینا

کوئی بھی موڑ مُڑ جانا

کسی منزل کو ٹھوکر مار کر واپس چلے آنا

یا منزل کو فقط اک جنبش لب سے

بہت نزدیک لے آنا

مجھے معلوم ہے پیارے

بہت آسان ہے تم کو واپس پلٹ جانا

میری تم بے بسی دیکھو

مجھے تم سے محبت کے سوا کچھ نہیں آتا

مگر اس میں بھی کب کوئی قرینہ سیکھ پائی میں

یہ دیکھو آنکھ رونا چاہتی ہے

پھر بھی بنجر ہے

یہ دیکھو ہاتھ کتنے سرد ہیں میرے

یہ دیکھو دل کی دھڑکن کس تیرا ترتیب کھو کر ڈوبنے کو ہے

یہ دیکھو میرا آنچل میرے ہاتھوں سے پھسل کر اُڑ گیا کب سے

یہ دیکھو سانس کی ڈوری بھی مجھ سے چھوٹنے کو ہے

میرے احساس کا ریشم الجھ کر ٹوٹنے کو ہے

مجھے تو یہ ہنر بالکل نہیں آتا

کے کیسے اپنے زخموں کو چھپاتے ہیں

یا کیسے درد کو درمان بناتے ہیں

یا کیسے روٹھتی سانسوں کا دامن

تھام کر واپس بلاتے ہیں

بہت بے خواب اور ویران موسم میں

خفا نیندوں کو کیا کہہ کر مناتے ہیں

مجھے یہ ہنر بالکل نہیں آتا

کے کیسے اپنے مر جانے پہ نوحے آپ کرتے ہیں

یا اپنے ہی گلے لگ کر دلاسا کیسے بانٹتے ہیں

پھر اپنی ہی لاش کو کیسے

کسی پایاب دریا

یا کسی کی ادھ بجھی تازہ چِتا میں جھونک دیتے ہیں

یا پھر آکاش کے نیچے کھلا ہی چھوڑ دیتے ہیں

مجھے تو یہ ہنر بالکل نہیں آتا

کے کیسے زرد موسم میں

کسی بھی سرد اور بے درد موسم میں

خوشی کا ایک بھی غنچہ

بھلا کیسے کھلاتے ہیں

یا کیسے آدھے راستے سے گھروں کو لوٹ جاتے ہیں

مجھے بالکل نہیں آتا

مجھے تم سے محبت کے سوا

مگر وہ بھی کہاں آئی

کوئی ہنر  بالکل نہیں آتا

You might also like